ذہین لوگوں کی دس نشانیاں/ عادتیں جو آپ لوگ نہیں جانتے

  


10 sign of intelligent peoples

بہت سارے لوگ ایسے ہوتے ہیں جو سائنس کے حساب سے بہت زیادہ ذہین (Geniuse) ہوتے ہے،لیکن ذیادہ تر لوگوں کو اس چیز کا علم نہیں ہوگا کہ کہ وہ ایک ذہین انسان ہے۔سائنس کا ماننا ہے کہ ہر انسان کا دماغ ایک ہی جیسا ہوتا ہے،لیکن پھر بھی کچھ لوگ ذہانت میں کسی سے آگے اور کچھ لوگ پیچھے ہوتے ہیں۔یہ بات ہم پڑھائی کو لیکر بھی سمجھ سکتے ہیں،کہ کچھ لوگ کلاس میں فرسٹ آتی ہے تو کچھ لوگ پاس ہی ہوتا ہے اور کچھ لوگ تو کئی بار فیل بھی ہو جاتے ہیں۔لیکن اس کا مطلب ہرگز یہ نہیں کہ فرسٹ آنے والا ہی ذہین ہوتا ہے،بلکہ کلاس میں لاسٹ آنے والے بھی ذہین ہو سکتا ہے۔اس میں بھی کوئی شک نہیں کہ انسان تعلیم کی وجہ سے ہی عقلمند ہوتا ہے لیکن اس بات میں بھی وزن ہے۔کہ تعلیم نہ رکھنے والے لوگ جن کی سوچیں تھوڑی الگ ہوتی ہے،ان کو بھی ذہین لوگوں کی کیٹیگری میں شامل کر سکتے ہیں۔سائنسدانوں نے ان لوگوں کے اوپر ریسرچ کر کے جو علامات بتائی ہے جن کے وجہ سے ہم جان سکتے ہے کہ کوئی کتنا ذہین ہے۔وہ ذیل میں سٹیپ بائی سٹیپ ہیں۔

《1》آپ نے اکثر دیکھا ہوگا کہ کچھ لوگوں کو ذرا سا ٹائم ملے تو وہی سو جاتے ہیں ایسے لوگوں کو لوگوں کی طعنے بھی سننے پڑتے ہیں۔لیکن سائنس کا یہ ماننا ہے کہ جو لوگ سمارٹ ہوتے ہیں ان کا دماغ زیادہ تیز کام کرتا ہے اور جلد تھک جاتا ہے لیکن تیزی سے دوبارہ چارج بھی ہو جاتا ہے۔اس لئے جو لوگ تھوڑے تھوڑے وقفے کے بعد سو جاتے ہیں۔وہ نارمل لوگ نہیں بلکہ بہت ذہین لوگ ہوتے ہیں۔

《2》یہ بات تو کافی لوگ جانتے ہی ہونگے ہے کہ چیونگم چبانے سے دماغ ایکٹیو رہتا ہے اور اس کا اثر 20 منٹ تک ہی رہتا ہے لیکن سائنس کا یہ ماننا ہے کہ جو ذہین لوگ ہوتے ہیں ان کو لگاتار کچھ نہ کچھ چھبانے کی عادت ہوتی ہے۔جو لوگ کوئی چیز منہ میں چباتے رہتے ہے ان کے دماغ کسی بھی چیز کو لے کر ایڈیا بہت جلد آجاتی ہے۔آپ نے کرکٹر کو اکثر چیونگم چباتے ہوئے اکثر دیکھا ہوگا اس کی بھی یہی یہی وجہ ہے کہ ان کا دماغ ہت وقت ایکٹیو رہے۔

《3》سائنس کا یہ ماننا ہے کہ جو لوگ سست ہوتے ہیں عام لوگوں کی نسبت زیادہ کامیاب بھی ہوتی ہے اور ذہین بھی ہوتے ہے۔دراصل ہوتی یہ ہے جب یہ کوئی کام کرتا ہے تو اپنا دماغ بہت زیادہ استعمال کرتا ہے اور ان کا دماغ دوسرے لوگوں کی نسبت جلد تھک جاتا ہے۔جس کی وجہ سے ان میں سستی آجاتی ہے یہ لوگ کسی بھی کام کو کرنے بیٹھتے ہیں،تو یہی سوچتے ہیں کہ ختم کر کے ہی اٹھوں گا،لیکن تھوڑی دیر بعد کام کرنے کے بعد یہ لوگ تھک جاتی ہے۔اور لوگوں کی نظر میں یہ لوگ نکمے بھی ہوتے ہے۔لیکن حقیقت اس کے برعکس ہے ایسے لوگ اپنے کام صحیح سے کرنے میں بھی کوئی کسر نہیں چھوڑتے ہیں۔ کیونکہ ہر کام میں سستی کی وجہ سے وقفہ اجاتا ہے،اور دماغ پھر سے فریش ہو جاتا ہے اس کا مطلب یہ نہیں کہ آپ ذہین بننے کیلئے سست ہو جاؤ۔

《4》جو سمارٹ لوگ ہوتے ہیں وہ کتنے ہی قابل کیوں نہ ہو ان کو کسی بھی کام میں یہی لگتا ہے،یہ مجھ سے صحیح نہیں ہوا ہے اپنے ہر کام میں شک کرتے رہتے ہیں۔جس کا مطلب یہ ہوا کہ وہ کچھ اور سیکھنا چاہتے ہے اور جو لوگ جس کام کے بارے میں نہیں جانتے اور لوگوں میں کہہ دیتے ہیں کہ ہاں مجھے نہیں پتا تو یہ لوگ بہت ہی زیادہ ذہین ہوتا ہے۔کوئی چیز پوچھنے پر تو پر زیادہ تر لوگ سر ہاں میں ہی ہلا دیتا ہے، بے شک وہ جانتے ہو یا نہیں اگر آپ بھی لوگوں میں نا کرنے سے نہیں ڈرتے،تو یہ بھی ذہین لوگوں کی ایک بہت ہی بڑی نشانی ہے سائنس کا ماننا ہے کہ نا کہنے سے انسان بہت کچھ سیکھ جاتا ہے۔

《5》جو لوگ رات کو بہت زیادہ دیر تک جاگتے رہتے تھے وہ لوگ ذہین لوگوں کی کیٹگری میں آتے ہیں،ان لوگوں کا دماغ ہر وقت کچھ نہ کچھ کرنا چاہتا ہے۔یہ لوگ رات کو دیر تک اسی لئے جاگتے رہتے ہیں کہ چکھ نہ کچھ ان کی دماغ میں چلتا رہتا ہے لیکن رات کو یوٹیوب،گوگل اوپن کرکے کسی چیز کے بارے میں انفارمیشن لینا کتابیں پڑھنا ہے یا کوئی بھی ایسا کام اکیلے میں ضرور کریں گے جن سے ان کو کچھ نہ کچھ سیکھنے کو ملتا ہے۔یہ لوگ سوچتے بہت زیادہ ہے جس کی وجہ سے نہیں ان کو بالکل نہیں آتی ہے آپ نے کافی دفعہ سنا ہو گا کہ جو کامیاب اور جینیس لوگ ہوتی ہے،ان کو ان کی نیند نہ آنےبیماری ہوتی ہے،یعنی چاہ کر بھی سو نہیں پاتی ہے اور اس وجہ سے کچھ نہ کچھ کرنے لگ جاتے ہیں۔

《6》جو لوگ بہت زیادہ ذہین ہوتے ہیں اتنا ہی زیادہ کریٹیکل بھی ہوتی ہے۔یعنی ہر بات میں کیڑا نکالنا ان کا عادت ہوتا ہے چاہے وہ اپنا کام ہو یا دوسروں کا،کیونکہ یہ لوگ ہر کام پروفیشنل کرنا چاہتے ہیں،اس جلدی کسی بھی کام سے راضی نہیں ہو جاتی۔

《7》ذہین لوگ ایک اور عادت ہوتی ہے،وہ یہ ہے کہ یہ لوگ ایک ہی وقت میں بہت زیادہ کام کرہے ہوتے ہیں،پڑھتے ہوئے بھی ساتھ میں کوئی دوسرا کام ضرور کرتا ہے۔یعنی ایک وقت میں ان کو زیادہ چیزیں کرنے کا عادت ہوتی ہے۔اگر آپ میں بھی عادت ہے تو یہ بھی ذہین لوگوں کا کام ہے۔

《8》جینیس لوگ اکثر خود سے ہی باتیں کرتے ہیں،لوگوں سے الگ رہتے ہیں اس لیے ان کو کسی ساتھی کی ضرورت ہوتی ہے وہ یہ سب اپنے اندر ہی دیکھتے ہیں وہ ہر چیز کے ہر حل خود نکالتے ہیں اس لیے اپنے مسائل کو کسی پیپر پر لکھتے ہے یا خود سے باتیں کر کے اپنے آپ کو سمجھا رہے ہوتے،اپنے آپ سے سوال کرنا خود ہی موٹیویٹ ہونے کے لئے اس کا جواب دینا اگر آپ بھی شیشے کے سامنے کھڑے ہو کر خود سے بات کرتی ہے تو یہ پاگل پن نہیں بلکہ سائنس کہتی ہے کہ آپ کا دماغ دوسروں سے زیادہ چلتے رہتے تھے۔

《9》جو لوگ ذہین ہوتے ہیں ان کو کتابیں پڑھنے کا بہت شوق ہوتا ہے یہ کسی چیز کو سننے گے تو اس کو گوگل کر کے اچھے اچھے آرٹیکل پڑھنے شروع کرینگے۔ یہ بھی ذہین لوگوں کی ایک عادت ہوتی ہے کیونکہ وہ صحیح سے جانتے اگر کسی نے کوئی کتاب لکھی ہے تو اس نے اپنی پوری زندگی لگا کر وہ کتاب لکھی ہے۔اور ہم کچھ دن یا گھنٹے لگا کر اس کی ساری زندگی کے بارے میں جان سکتے ہیں،اور کچھ نیا سیکھ سکتے ہیں-اس لیے وہ لوگ ان کاموں وقت ضائع نہیں کرتے جو لوگ پہلے سے ہی سمجھ چکے ہوتے ہیں۔

《10》جس کسی سے لوگوں سے ملنے میں اچھا محسوس نہیں ہوتا ہے بات کرنے میں دشواری آنا، یہ کوئی اچھی بات نہیں ہے لیکن سائنس کا کہنا ہے کہ جو لوگ ذہین ہوتے ہیں انہیں عام لوگوں سے بات کرنے میں بہت مشکل آتا ہے۔کیوں کہ ان کے سوچنے کا انداز دوسرے لوگوں سے بہت ہی مختلف ہوتا ہے،عام لوگوں میں جلدی گھلنا ملنا ان کے لئے آسان کام نہیں ہوتا وہ ہر کام دوسروں سے الگ کرنا چاہتے ہیں اس لیے لوگوں سے زیادہ میل ملاپ نہیں رکھتا ہے اکیلے رہنا ان لوگوں کو اچھا لگتا ہے اگر آپ میں بھی یہ سب عادتیں ہے،تو آپ ایک Geniuse انسان ہے۔



Reactions

Post a Comment

0 Comments